7

بس بہت ہوگیا! حکومت اب یرغمال نہیں بنے گی، وزیر داخلہ

اسلام آباد: وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کالعدم تنظیم کے پرتشدد مظاہرین کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بس بہت ہوگیا، حکومت اب مزید یرغمال نہیں بنے گی، جب تمام مطالبات تسلیم کرلیے تو احتجاج کا کوئی جواز نہیں، مارچ ہوا تو اسے ہر صورت روکا جائے گا۔

اپنے بیان میں وزیرداخلہ نے کہا ہے کہ اگر مظاہرین واپس مرکز چلے جائیں تو حکومت ان سے بات چیت کے لیے تیار ہے لیکن جی ٹی روڈ بند کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی، یہ دفاعی لحاظ سے اہم شاہراہ ہے اسے بند نہیں کیا جاسکتا۔
وزیر داخلہ شیخ رشید احمد کا کہنا تھا کہ جمعہ اور ہفتہ کو سعد رضوی سے دوبارہ بات ہو گی، وزیر اعظم عمران خان پاکستان کی ریاست مدینہ کی طرز پر تعمیر کے لیے اقدامات کر رہے ہیں، نبی کریم ﷺ کی ناموس کی حفاظت اور اسلامو فوبیا کے معاملے کو انہوں نے عالمی فورمز پر اٹھایا اور پوری دنیا میں عالم اسلام کی آواز بنے، حکومتی سطح پر پہلی بار ملک بھر میں عشرہ رحمت اللعالمین ﷺبھرپور طریقے سے منایا گیا اور رحمت اللعالمینؐ اتھارٹی کا قیام عمل میں لایا گیا۔
انہوں نے کہا کہ جب تمام مطالبات پہلے ہی تسلیم کیے جاچکے ہیں تو احتجاج اور پرتشدد مظاہروں کا کوئی جواز نہیں، فرانس کا سفیر پاکستان چھوڑ کر جاچکا ہے، ان ہنگاموں کے دوران پولیس کے جوان شہید ہوئے، اس کا حساب کون دے گا؟ مظاہرین نے پولیس پر کلاشنکوف سے سیدھی گولیاں چلائیں۔
وزیر داخلہ نے مزید کہا کہ پاکستان کو نقصان پہنچا کر اسلام کی کون سی خدمت کی جارہی ہے، جو حالات پیدا کیے گئے ہیں اس سے لبیک اور حکومت دونوں کا نقصان ہوگا۔
شیخ رشید احمد نے کہا کہ پاکستان کے خلاف عالمی پابندیاں لگانے کی سازش ہو رہی ہے، ہم نے پولیس کو وہ اختیارات نہیں دیے جو وہ ہم سے مانگ رہے ہیں، بات آگے بڑھی تو جو سڑکوں پر ہیں انہی کا نقصان زیادہ ہو گا۔
وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ تحریک لبیک سیاسی کردار ادا کرے، الیکشن کمیشن نے اس پر پابندی نہیں لگائی، حکومت جھکے گی نہ یرغمال بنے گی، ریاست کی رٹ قائم کی جائے گی اور مظاہرین کو ہر صورت روکا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں